یہ کریں گے پاکستان سے مقابلہ؟ بھارت کا کھربوں روپے کا اسلحہ ناکارہ ہوگیا

نئی دہلی (نیوز پاکستان) بھارتی فوج نے مقامی طور پر 41 آرڈننس فیکٹریوں کی طرف سے فراہم کردہ کھربوں روپے مالیت کے گولہ بارود کے ناقص اور غیر معیاری ہونے پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق ٹینکوں، توپوں اور فضائی دفاع کے لئے

فراہم کر دہ اس غیر معیاری اور ناقص گولہ بارود کے نتیجہ میں بڑی تعداد میں حادثات رونما ہوئے ہیں جن کے نتیجے بڑی تعداد میں فوجیوں کے ہلاک و زخمی ہونے کے ساتھ ساتھ آلات کو بھی نقصان پہنچا ہے۔بھارتی فوج کی طرف سے وزارت دفاع کو دی گئی رپورٹ کے مطابق 2002 ء سے 2014 ء کے دوران ان فیکٹریوں سے فراہم کئے گئے ناقص اور غیر معیاری گولہ بارود کی مالیت 14ہزار کروڑ روپے اور 2014 ء سے 2019ء تک ساڑھے سات ہزار کروڑ روپے رہی۔بھارتی فوج کی طرف سے اس حوالے سے جاری پندرہ صٖفحات کی رپورٹ پر وزیر برائے دفاعی پیداوار اجے کمار نے نوٹس لیتے ہوئے سرکاری فیکٹریوں میں تیار ہونے والے گولہ بارود کے معیار کو بہتر بنانے کے اقدامات کی ہدایت کی

ہے۔بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق اس حوالہ سے گولہ بارود کی پیداوار میں نجی شعبہ کی شمولیت کی تجویز پر غور کیا جا رہا ہے۔یہ تجویز پیش کرنے والوں کا کہنا ہے کہ گولہ بارود کی تیاری کے شعبہ میں سرکاری شعبہ کی اجارہ داری اور مسابقت کی عدم موجودگی گولہ بارود کے معیار میں کمی کا باعث ہے۔رپورٹ کے مطابق ناقص اور غیر معیاری گولہ بارود کی وجہ سے بھارتی فوج کی 105 ایم ایم فیلڈ گنز، 105 ایم ایم لائٹ فیلڈ گنز، 130 ایم ایم ایم اے ون میڈیم گنز، 40 ایم ایم ایل۔70 ایئر ڈیفنس گنز، ٹی۔72، ٹی۔90 اور ارجن ٹینکس سے فائرنگ کے دوران بہت حادثات پیش آ چکے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں