ہر سوال پر ’نو کمنٹس‘۔۔الطاف حسین دوران تفتیش صرف 3سوالوں کے جواب ہی دے سکے،جانتے ہیں وہ تین جواب کیا تھے۔۔۔

لندن (نیوز پاکستان) بانی ایم کیوایم الطاف حسین کو گذشتہ روز اسکاٹ لینڈ یارڈ نے گرفتار کیا جس کے بعد انہیں مقامی پولیس اسٹیشن منتقل کر دیا گیا تھا۔ تفصیلات کے مطابق برطانوی پولیس نے بانی ایم کیو ایم سے دو گھنٹے تک تفتیش کی۔ بانی ایم کیو ایم پر آج فرد

جُرم عائد ہونے کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا لیکن تاحال 28 گھنٹے گزر جانے کے باوجود الطاف حسین پر کوئی فرد جُرم عائد نہیں کی گئی۔ برطانوی پولیس فرد جُرم عائد کیے بغیر چار روز تک الطاف حسین کو اپنے پاس رکھ سکتی ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق بانی ایم کیو ایم الطاف حسین سے مقامی وقت کے مطابق گذشتہ رات دس سے بارہ بجے تک تفتیش کی گئی۔ تفتیش کے دوران الطاف حسین نے صرف اپنا نام ، تاریخ پیدائش اور گھر کا پتہ بتایا ۔بانی ایم کیو ایم نے برطانوی پولیس کے کسی بھی سوال کا جواب دینے سے انکار کر دیا جس پر برطانوی پولیس نے انہیں بتایا کہ آپ کے پاس ”نو کمنٹس” کہنے کا آپشن موجود ہے۔لیکن نوکمنٹس کہنا عدالت میں آپ کے خلاف جا سکتا ہے۔ تاہم بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کے وکیل نے انہیں ”نو کمنٹس” کہنے کا ہی مشورہ دیا۔ بانی ایم کیو ایم اس وقت سدرن پولیس اسٹیشن میں

موجود ہیں جہاں ان سے تفتیش کی جا رہی ہے۔ تفتیش کے دوران الطاف حسین نے سینے میں درد کی شکایت کی جس پر برطانوی پولیس نے تفتیش روک دی۔ یاد رہے کہ گذشتہ روز اسکاٹ لینڈ یارڈ نے صبح سویرے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کے گھر پر چھاپہ مارا۔ چھاپے میں 15 کے قریب پولیس اہلکاروں نے حصہ لیا۔اسکاٹ لیںڈ یارڈ نے بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کو لندن میں ان کے گھر سے گرفتار کرلیا جس کے بعد انہیں مقامی پولیس اسٹیشن منتقل کیا گیا تھا۔ بعد ازاں بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کی ضمانت کے لیے درخواست دائر کر دی گئی تھی۔ یہ درخواست ایم کیو ایم کے وکلا نے دائر کی تھی۔ لیکن تاحال ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین برطانوی پولیس کی حراست میں ہی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں