برطانوی شاہی جوڑا شہزاد ہ ولیم اور کیٹ میڈلٹن کا پاکستان آنے کا اعلان۔معزز مہمان پاکستا ن کب آرہے ہیں؟ جانئے

لندن (نیوز پاکستان) وزارتِ خارجہ کے مطابق برطانوی شاہی جوڑا شہزادہ ولیم اور کیٹ میڈلٹن رواں سال پاکستان کا دورہ کریں گے۔کینگسٹن پیلس کے حوالے سے میڈیا میں بھی خبر آئی ہے کہ برطانوی شاہی جوڑا شہزادہ ولیم اور کیٹ میڈلٹن رواں سال پاکستان کا دورہ کریں گے،

دورہ برطانیہ کے دفتر خارجہ اوردولت مشترکہ دفتر کی درخواست پر کیا جائے گا۔ کینگسٹن پیلس کے مطابق شاہی جوڑے کا دورہ پاکستان رواں سال موسم خزاں میں ہوگا۔یہ دورہ ایک ہفتے کا ہو گا اور دونوں ممالک کے تعلقات کی اہمیت کا آئینہ دار ہو گا۔ خیال رہے کہبرطانوی ملکہ ایلزبتھ نے اپنے پوتے شہزادہ ولیم کو برطانیہ کے نئے بادشاہ کے طور پر منتخب کرلیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق برطانوی ملکہ ایلزبتھ دوئم کو برطانیہ کی بادشاہت کرتے ہوئے 67 سال گزر چکے ہیں اور وہ زندہ رہنے تک تخت پر براجمان رہیں گی ۔ملکہ ایلزبتھ کے بعد برطانیہ کی تخت نشینی ان کے بیٹے 70 سالہ شہزادہ چارلس کے پاس آنی ہے لیکن ملکہ ایلزبتھ نے برطانیہکے نئے بادشاہ کے طور پر اپنے بیٹے

کی بجائے پوتے کو منتخب کیا ہے۔ملکہ ایلزبتھ ’ڈیمینشیا‘ میں مبتلا ہوچکی ہیں اپنی بیماری کے باعث وہ مزید زیادہ عرصے تک خدمات سر انجام نہیں دینا چاہتیں۔میڈیا رپورٹ کے مطابق شاہی محل کے قریبی ذرائع کا حوالہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ ملکہ برطانیہ نے تخت نشینی کی منتقلی کیلئے ایک خفیہ تقریب منعقد کی تھی جس میں انہوں نے اپنے پوتے کو بادشاہ کے طور پر منتخب کرلیا ہے ۔ذرائع نے دعویٰ کیا کہ ملکہ برطانیہ بیٹے شہزادے چارلس سے زیادہ پوتے شہزادہ ولیم کو پسند کرتی ہیں اور انہیں یقین ہے کہ وہ اپنے والد سے زیادہ احسن طریقے سے بادشاہت کی ذمہ داریاں نبھائیں گے۔ دوسری جانب میڈیا رپورٹس کے مطابق ملکہ الزبتھ ، کیٹ، شہزادہ ہیری، شہزادہ چارلس سمیت شاہی خاندان کے تمام افراد کئی غیر ملکی زبانیں با آسانی بول اور سمجھ سکتے ہیں۔لیکن ان میں شہزادہ ولیم واحد ہیں جو ایک یا دو نہیں بلکہ پانچ غیر ملکی زبانیں بولنا جانتے ہیں اور ناصرف بول سکتے ہیں بلکہ ان پانچوں زبانوں میں وہ مہارت بھی رکھتے ہیں،اسی لیے شہزادہ ولیم اور کیٹ کے بچوں شارلٹ اور جارج نے بھی ابھی سے غیر ملکی زبانیں سکھانا شروع کردیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں