نامنظورنامنظور ! کامران اکمل ، وہاب ریاض سمیت قومی کھلاڑیوں نے وزیراعظم عمران خان کے خلاف اعلان بغاوت کر دیا

لاہور (نیوز پاکستان) قومی کرکٹرز وہاب ریاض اور کامران اکمل نے بھی ڈیپارٹمنٹل کرکٹ ختم کرنے کے خلاف آواز بلند کر دی ہے جن کا کہنا ہے کہ اگر محکموں کی ٹیمیں بند ہو گئیں تو کرکٹ کیساتھ ساتھ کرکٹرز کو بھی نقصان ہو گا، کوئی بھی فیصلہ کرنے سے پہلے اس پہلو کو بھی

سامنے رکھنا چاہئے.تفصیلات کے مطابق فاسٹ باﺅلر وہاب ریاض کہتے ہیں کرکٹ کا سٹرکچر کیا ہونا چاہیے، اس کا فیصلہ تو بہر حال پی سی بی نے کرناہے لیکن میری ذاتی رائے میں ڈیپاڑٹمنٹل کرکٹ کی وجہ سے ہی بہترین کرکٹ ہونے کے ساتھ اچھے کرکٹرز بھی سامنے آ رہے ہیں اس لئے اسے ہرگز بند نہیں کرناچاہیے، یاد رہے کہ اس سے قبل بھی یہ خبر تھی کہ جاوید میانداد اور جہانگیر خان سمیت کئی سابق کھلاڑیوں نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے ڈپارٹمنٹس کی سطح پر کھیل ختم کرنے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کھیلوں

کے فروغ میں مختلف ڈپارٹمنٹس کا کردار رہا ہے اور جب تک ڈپارٹمنٹ تھے تو پاکستان کئی کھیلوں کا ورلڈچیمپئن تھا۔کراچی پریس کلب میں دیگر قومی ہیروز جہانگیر خان، سید صلاح الدین اور دیگر کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق ٹیسٹ کرکٹر جاوید میاندادنے کہا کہ موجود ہ حالات میں کھلاڑیوں کا سب سے بڑا مسئلہ معاشی ہے اور میں یقین سے کہتا ہوں کہ اگر پی آئی اے نہ ہوتا تو آج جہانگیر خان ، جہانگیر خان نہ ہوتے۔انہوں نے کہا کہ آج ہر ایک کو نوکری چاہیے اور کرکٹ اور ہاکی کوئی کھیلنا نہیں چاہتا۔جاوید میانداد نے کہا کہ کیا وزیر اعظم عمران خان نے خود پیسوں کے لیے کاؤنٹی کرکٹ نہیں کھیلی؟ ،سب پیسوں کیلیے کاونٹی کرکٹ کھیلتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ڈپارٹمنٹل اسپورٹس بند کرکے کھلاڑیوں کو بے روزگار کیاجا رہا ہے، لوگ مجبوراً کرکٹ اور ہاکی کھیلتے ہیں اور آپ مجبوری سے فائدہ اٹھاتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں