افغانستان، پاکستان کی دشمنی میں پاگل ہوگیا، افغان ٹیم کے سب سے تگڑے کھلاڑی کو آئی ایس آئی کا ایجنٹ قرار دے کر ورلڈکپ کی ٹیم سے باہر نکال دیا گیا

کابل (نیوز پاکستان) افغان کرکٹر شہزاد خان کو پاکستان کا ایجنٹ قرار دے کر ورلڈکپ کی ٹیم سے باہر کر دیا گیا، وکٹ کیپر بلے باز کو ورلڈکپ کے دوران اچانک واپس بھیج دیا گیا، کرکٹر نے کرکٹ بورڈ کے اقدام کو سیاسی قرار دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق افغان کرکٹر

شہزاد خان نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ مکمل طور پر فٹ تھے، انہیں سیاسی نشانہ بناتے ہوئے ورلڈکپ کی ٹیم سے باہر نکال دیا گیا۔ شہزاد خان نے دعویٰ کیا ہے کہ افغان کرکٹ بورڈ نے ان پر پاکستان اور آئی ایس آئی کا ایجنٹ ہونے کا الزام عائد کیا ہے۔ ان پر الزام لگایا گیا ہے کہ وہ جان بوجھ کر پاکستان کیخلاف میچوں میں کارکردگی نہیں دکھاتے۔ اسی لیے انہیں عین ورلڈکپ کے دوران ٹیم سے بنا کسی وجہ کے باہر کر دیا گیا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل افغان کرکٹ بورڈ نے اعلان کیا تھا کہ افغانستان کے وکٹ کیپر بیٹسمین محمد شہزاد انجری کے باعث

ورلڈ کپ 2019 سے باہر ہوگئے۔ افغان کرکٹ بورڈ کے مطابق محمد شہزاد مکمل صحتیاب نہ ہونے پر ورلڈکپ سے باہر ہوئے، انکی جگہ اکرام اللہ خیل کو ٹیم میں طلب کرلیا گیا۔ محمد شہزاد پاکستان کیخلاف وارم اَپ میچ کے دوران ٹخنے کی انجری کا شکار ہوگئے تھے۔ اس میچ میں گرین شرٹس کو افغانستان نے شکست دی تھی۔ انجری کے باوجود محمد شہزاد نے آسٹریلیا اور سری لنکا کےخلاف میچ بھی کھیلا۔ تاہم افغانستان کو دونوں میچز میں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ جس کے بعد انہیں فوری افغانستان واپس بھیج دیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں