نواز شریف کو رہا کرنا مجبوری بن گیا۔۔ اہم ترین عدالتی شخصیت نے ن لیگ کو خوشخبری سنا دی

اسلام آباد (نیوز پاکستان) سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کا کہنا ہے کہ نواز شریف جیل سے باہر آجائیں گے۔تفصیلات کے مطابق سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کا ویڈیو سکینڈل کے بعد اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کے فیصلے پر گفتگو کرتے

ہوئے کہنا تھا کہ نواز شریف جیل سے باہر آ جائیں گے۔کیونکہ پاکستان کی بڑی عدالتوں کی کوشش ہو گی کہ عدالتی نظام اور اس کی ساکھ کو بچایا جائے ان کے لیے ضروری نہیں ہے کہ نواز شریف جیل میں رہیں یا نہیں۔ بظاہر لگ رہا ہے کہ جج ارشد ملک کو اس تمام معاملے سے الگ کر دیا جائے گا اور جب ایسا ہو گا تو ارشد ملک کا کیا ہوا فیصلہ بھی متاثر ہو گا۔اور عدالت کہے گی کہ دیکھیں ہم نے جج کا ساتھ نہیں دیا اور اس ٹرائل کو ختم کر دیا ہے۔ سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر کا مزید کہنا تھا کہ عدالتوں کے لیے اس وقت اپنی ساکھ بچانا زیادہ ضروری ہے۔خیال رہے گذشتہ روز ویڈیو سکینڈل کے بعد احتساب عدالت کے جج ارشد ملک نے بیان حلفی جمع کروایا تھا۔ میڈیا

رپورٹس کے مطابق ارشد ملک نے بیان حلفی میں کہا تھا کہ سماعت کے دوران مجھ سے ملنے کی کوشش کی جاتی رہی16 سال پہلے کی ویڈیو دکھا کر دھمکی دی گئی۔جو ملتان کی ویڈیو تھی۔ویڈیو کے بعد کہا گیا کہ وارن کرتے ہیں ہمارے ساتھ تعاون کریں۔ ویڈیو دکھانے کے بعد دھمکی دی گئی اور پھر وہاں سے سلسلہ شروع ہوا۔ مجھے کہا گیا کہ ہمارے ساتھ تعاون کیا جائے ہم آپ کے ساتھ تعاون کریں گے۔ سماعت کے دوران ان کی ٹوندھمکی آمیز ہو گئی تھی ان کا لہجہ دھمکی آمیز ہو گیا،۔سماعت کے دوران بھی مجھ سے رابطہ کرنے اور ملنے کی کوشش کی جاتی رہی۔ مجھے رائیونڈ لے کر جایا گیا اور نواز شریف کے ساتھ ملاقات کروائی گئی نواز شریف نے کہا کہ آپ کو مالا مال کر دیں گے۔ ارشد ملک نے اپنے بیان حلفی میں کہا ہے کہ نواز شریف کے کیسز کی سماعت کے دوران ن لیگ کے دو نمائندوں نے مجھ سے رابطے کیے اور کہا کہ نواز شریف منہ مانگی رقم دینے کو تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آپکو کسی بھی ملک میں پیسے ادا کرنے کو تیار ہیں۔ناصر جنجوجہ اور مہر جیلانی نے نواز شریف کو بری کرنے کے لیے دھمکیاں دی جب کہ ناصر جنجوعہ نے نواز شریف کو بری کرنے کے بدلے 20 ملین یورو کی پیشکش کی۔ میں نے پیشکش کو ٹھکراتے ہوئے کہا کہ 6 مرلے کے گھر میں رہتا ہوں اپنے حلف کے ساتھ غداری نہیں کروں گا۔خیال رہے اسلام آباد ہائیکورٹ نے گذشتہ روز جج ارشد ملک کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں